او آئی سی نے بھی کشمیر کے لیے کوئی خاطر خواہ اقدامات نہیں کیے، کشمیر کے ساتھ ساتھ برما، فلسطین اور عراق کے مسمانوں پر جو ظلم و ستم کے پہاڑ توڑے جارہے ہیں او آئی سی کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے ۔ اقوام متحدہ میں خصوصی مبصر براۓ انسانی حقوق رانا بشارت علی خان

کشمیر ایک جنت ہے اور جنت کسی کافر کو ملی ہے نہ ملے گی”

کشمیر وہ حقیقت ہے جو کہ عالمی سطح پر تسلیم شدہ ہے بھارت چاہ کر بھی اسے پس پشت نہیں ڈال سکتا، رانا بشارت علی خان

اقوام متحدہ میں خصوصی مبصر براۓ انسانی حقوق رانا بشارت علی خان نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ تاریخ گواہ ہے کہ جب جب بھارت نے کشمیر کاز اور اس کے اندرونی حالات سے دنیا کی نظریں ہٹا نے کی کوشش کی تب تب کشمیر ابھر کر سامنے آیا اور پوری دنیا نے دیکھا۔
معصوم بچے کے سامنے اسکے نانا کو شہید کرکے اور لاش کی بے حرمتی کرکے سفاکیت اور درندگی کی نئی داستان رقم کی اور عالمی ضمیروں سے انصاف کا مطالبہ کیا لیکن افسوس کہ انسانی حقوق کی دعویداروں کے ضمیر بیدار نہ ہوسکے۔

انہوں نے مزید کہا کہ کشمیر میں بھارتی درندگی کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ 3 سالہ بچے کے سامنے اس کے نانا کو شہید کرنا انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی ہے جو کہ اس بات کا ثبوت ہے کہ کس طرح بھارت پچھلے 70 سالوں سے معصوم کشمیریوں پر ظلم و بر بریت کی داستانیں رقم کر رہا ہے۔
معصوم بچے کی اپنے شہید نانا کے لاشے پر بیٹھے تصویر نے ہر آنکھ اشک بار کردی اور یہ تصویرعالمی ضمیروں سے انصاف کی اپیل کر رہی ہے۔ بھارتی فوج آۓ روز معصوم کشمیریوں پر ظلم کے پہاڑ توڑ رہی ہے۔
اقوام متحدہ جس نے کشمیر کی آزادی کے لیے قراردادیں منظور کی ہیں آج تک عمل درآمد نہ کروا سکی۔
عالمی برادری اور عالمی ادارے خاموش تماشائی بنے بھارت کے ظلم و ستم کو دیکھ رہی ہے۔

ہم اقوام متحدہ سے کیا گلہ کریں کیا شکوہ کریں 57 اسلامیممالک اور ان پر مشتمل مسلمانوں کے حقوق کے تحفظ کے لیے بنائی اسلامی تنظیم اوآئیسی نے بھی کشمیر کے لیے کوئی خاطر خواہ اقدامات نہیں کیے، کشمیر کے ساتھ ساتھ برما، فلسطین اور عراق کے مسمانوں پر جو ظلم و ستم کے پہاڑ توڑے جارہے ہیں او آئیسی کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے ۔

میرا یہ ایمان ہے ، میرا یہ یقین ہے کہ ایک دن ضرور انصاف ہوگا اور کشمیر بھارت کے ناجائز اور غاصبانہ قبضہ سے آزاد ہوگا۔
میں اور میری ٹیم کشمیر کی آواز بنے گی اور کشمیر ایشو کو مزید تقویت دے گی ۔ انشاءاللہ

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *